Dhaniyaa Laitay Ana

March 5, 2021
176
Views

موٹیویشنل اسپیکر نے بیوی کو فون کیا اور کہا؛
“کسی نے میری گاڑی کا اسٹئیرنگ، بریکیں، ایکسیلیٹر، گئیر سب کچھ چوری کر لیا ہے.

مطلب اس دنیا کو کیسے سدھارا جائے.

ظاہر ہے میں پولیس میں رپورٹ تو لکھواؤں گا۔
لیکن مجھے بطور ایک درمند انسان سارے پہلو پہ غور بھی کرنا ہے کہ اس روییے کہ پیچھے کیا کیا محرکات ہیں. کیا بیروزگاری ہے یا تربیت کی کمی، ڈپریشن یا پھر کوئی نفسیاتی مسائل

. مجھے اس پہ بات کرنی ہوگی کہ لوگ ایسا کیوں کرتے ہیں. مجھے اس پہ بات کرنی ہوگی کہ لوگ ایسا کرنا کس طرح چھوڑ سکتے ہیں. کیا اسباب ہیں جن کی وجہ سے ایسے واقعے ہمارے معاشرے میں رونما ہوتے ہیں.

بیوی: غور ہوگیا؟ بول چکے؟
اب میری بات غور سے سنو. مجھے لگتا ہے کہ شاید تم پچھلی سیٹ پر بیٹھ گئے ہو.

ایک منٹ کے لیے مکمل سناٹا چھا گیا. اس کے بعد موٹیویشنل اسپیکر کی انتہائی دھیمی آواز آئی؛
” تم ٹھیک کہہ رہی ہو. میں پچھلی سیٹ پر ہی بیٹھا ہوں”

بیوی بولی : آتے ہوئے چھ انڈے، ایک ڈبل روٹی، ایک لیٹر دودھ، ایک پاؤ دہی، ایک گڈی ہرے دھنیے کی لیتے آنا. اور ہاں دھنیا سونگھ لینا. پچھلی بار بھی میتھی اٹھا لائے تھے”

Article Categories:
Entertainment · Latest

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

The maximum upload file size: 128 MB. You can upload: image, audio, video, document, spreadsheet, interactive, text, archive, code, other. Links to YouTube, Facebook, Twitter and other services inserted in the comment text will be automatically embedded.