Allah is Benevolent

May 2, 2020
20
Views

Hakayat seires| Allah is Benevolent| We should Bow Before Him for the Solution of our all Problesm.

Allah is Benevolent, We should Bow Before Him for the solution of our all problems. He Listens, He knows and He Watch us but He wants from us to Pray only from Him Alone! He is our Creator and Knws every Prons & Cons of our body, He knows what is good for us and what is bad for us. (Nadeem)

پرانے زمانے کی بات ہے۔ کسی علاقے میں ایک ایسا شخص رہتا تھا جو  اپنی جگت بازی اور لغویات کی بدولت مشہور تھا۔۔ایک بار  پیر و مرشد کے پاس بیٹھا کہنے لگا ۔۔

مُڑ سائیں ،تُساں مینوں حج تے گَھل دیو ،تےکیا ہی بات ہو۔۔

مرشد نے جواب دیا کہ

تم وہاں جا کر بھی یہی کچھ کرو گے عبادت تو کرو گے نہیں۔ 

 ۔(یعنی جُگتیں ہی مارے گا،کچھ عبادت وغیرہ نہیں کرے گا)۔

اس نے درخواست  کی ۔۔

پیر و مرشد میں وعدہ کرتا ہوں میں وہاں ایسا کچھ بھی نہیں کروں گا۔

 ۔۔اور صرف عبادت ہی کروں گا۔ 

مرشد نے کہا ۔۔۔ پھر یہ سب لکھ کر دو۔ 

میرے چینل پر آپ کو مختلف موضوعات پر مبنی وڈیوز کی پلے لسٹ نظر آیں گی اپنے پسندیدہ موضوع پر مبنی پلے لسٹ کا انتخاب کریں اور اپنی پسندیدہ وڈیوز بھی  دیکھیں۔ 

تو  کہانی کچھ یوں ہے پیر و مرشد نے اسی وقت اس شخص کے لیے ایک کاغذ پر حلف نامہ لکھوا لیا  ،کہ وہ وہاں صرف عبادت کرے گا،کوئی  لغو بات نہیں کرے گا،کسی کے ساتھ بھی جگت بازی  نہیں کرے گا،اپنے کام سے کام رکھے گا حج ایک بڑا مقدس فریضہ ہے ،وہ اسے ادا کرکے واپس آجائے گا۔

اس نے باقی مریدوں کی موجودگی میں حلف نامے پر خوشی خوشی انگاٹھا لگا دیا کیونکہ وہ شخص پڑھنا لکھنا نہیں جانتا تھا۔

مرشد نے ایک مرید سے کہا کہ اسے اپنےساتھ حج پہ لے جاؤ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ دونوں روانہ ہوئے حج ادا کیا اب 

۔سر منڈوانے کی باری آئی۔سر بھی منڈوا لیا۔۔

واپسی کی راہ لی۔۔۔

یہ اس زمانے کی بات ہے جب سفر خچروں، گدھوں اور گھوڑوں پر طے کیا جاتا تھا۔۔

واپسی کے سفر پر اب اس کا سر مُنڈا ہوا،اور گدھے پر بیٹھا۔۔اللہ کریم سے راز و نیاز میں مصروف ہوگیا۔۔۔کہنے لگا۔۔۔

“ہمارے گاوں میں جب کوئی چور پکڑا جاتا ہے تو اس کا سر منڈوا کر اس کو گدھے پر بٹھا کر گاوں کا چکر لگوایا جاتا ہے ۔ یہ سزا  دینے کے بعد پھر اسے معاف کر دیا جاتا ہے۔ مولا میں نے بھی تیرے گھر کا چکر لگا لیا ہے سر  بھی منڈوا لیا ہے اور اب  تیرے گھر سے گدھے پر سوار ہو کر جا رہا ہوں  اب بھی میرے مولا اگر تو مجھے معاف نہیں کرے گا میری خطاوں پر تو بات تو نہ بنی نا پھر۔۔۔۔

۔۔۔وہ گدھے پر بیٹھا اپنی دھن میں مست ،اللہ سے باتیں کرتا چلا جا رہا تھا جیسے ہی وہ ۔۔۔

دور بیٹھے ایک بزرگ کے پاس سے گزرے تو بزرگ نے ساتھ والے آدمی سے پوچھا یہ کون ہے اور کیا کہتا جا رہا ہے؟۔۔

اس شخصں نے بتلایا یہ فلاں شخص ہے جو علاقے میں اپنی لغویات کی وجہ سے بڑا مشہور ہے۔۔۔

۔۔۔ابھی اس کی بات مکمل نہ ہوئی تھی کہ اُن بزرگ نے اسے خاموش کروا دیا۔۔۔

کہنے لگے۔۔۔خاموش۔۔اسے بلانا مت۔۔وہ تو اس وقت وہاں ہے جہاں ہم بھی نہیں ۔۔میں دیکھ رہا ہوں ،وہ اللہ سے قریب ہے،وہ مانگ رہا ہے،اور اللہ اسے دے رہا ہے۔وہ ایسے انداز سے مانگ رہا ہےکہ اسی وقت پا رہا ہے۔!!!۔

یہ ایک چھوٹی سی کہانی اپنے اندر بہت بڑا پیغام لیے ہوئے ہے۔

اللہ کو کب ہماری کون سی ادا پسند آجائے۔ اس زات کو بے پناہ خزانوں سے مانگنے کا  ہمارا کون سا طریقہ بھا جائے،یہ سب ہم نہیں جانتے،اس لیے اللہ سے مانگیں ،،اپنے انداز میں۔ عجزی کے ساتھ جیسے انسان اپنی ماں سے لاڈ پیار سے بات کرتا ہے اپنی کسی بھی بات کو پورا کروانے کے لیے۔  اسی طرح ہمیں بھی چاہیے اپنی پوری توجہ کے ساتھ اللہ سے مانگیں وہ ہمیں ستر ماوں سے زیادہ پیار کرتا ہے ۔وہ سب زبانیں سمجھتا ہے،سب انداز ،ادائیں جانتا ہے۔۔۔۔، ۔۔،۔وہاں  کوئی روپے یا سکے نہیں چلتے، نیتیں چلتی ہیں،وہ بخشنے پر آئے تو ایک بات  پر بھی بخش دے…!!! 

امید ہے آپ کو میری یہ حکایت بھری وڈیو پسند آئی ہو گی۔ ملتے  ہیں جلد ایک نئی وڈیو کے ساتھ بہت جلد اور ہاں حضرت موسیٰ علیہ السلام کے معجزات کی سیریز کی انگلی یعنی تیسری قسط بہت جلد آپ سے شئیر کی جائے گی تو میرے چینل سے لینکڈ رہیں۔ اللہ ہم سب کے لیے آسانیاں فرمائے۔ ا

Article Categories:
Islamic Stories · Latest

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

The maximum upload file size: 128 MB. You can upload: image, audio, video, document, spreadsheet, interactive, text, archive, code, other. Links to YouTube, Facebook, Twitter and other services inserted in the comment text will be automatically embedded.